display ads

اردو شاعری عشق، اردو شاعری دو لائن، اردو شاعری محبت، Awesome Shayari Images love, Urdu Shayari, Best collection of Urdu Shayari Images

Best collection of Urdu Shayari Images, SMS & Beautiful Wallpaper 2019
اردو شاعری عشق، اردو شاعری محبت خوبصورت امیج کے ساتھ۔


ناظرین اس پوسٹ میں محبت بھری باتوں کے سوغات چھپے ہیں امید کرتا ہوں آپ حضرات کو پوسٹ پسند آئیں گے۔


Urdu Shayari Images, awesome Shayari Images

Awesome Shayari Images, Urdu love Shayari Images

Best collection of Urdu Shayari Images, SMS & Beautiful Wallpaper 2019

تشبیہ تیرے چہرے کو کیا دوں گلِ تر سے
 ہوتا ہے شگفتہ مگر اتنا نہیں ہوتا


ہوتی ہے عشق ہی سے حسن کی قدر
 ہمیں سے آپ کا شہرہ ہوا ہے


ممکن نہیں کہ عشق ہو اور دل حزیں نہ ہو
 میرا ہی حال دیکھ لے جس کو یقین نہ ہو


اثر وہی ہے محبت کا گو ہے ضبط مجھے 
جگر میں درد تو رہتا ہے چشمِ تر نہ سہی


یہ تجاہل عارفانہ بھی ہے کتنا دلفریب 
وجہِ گریہ پوچھتے ہیں عاشق دلگیر سے


یہ بھیگی رات اور یہ برسات کی ہوائیں
 جتنا بھلا رہا ہوں وہ یاد آرہا ہے


Awesome Shayari Images, Urdu Shayari love

Urdu Shayari Images, Love Shayari Images Urdu

Awesome Shayari Images love, Urdu Shayari love Images

یوں مٹ گئی وفا کہ زمانے کا ذکر کیا 
اب دوست سے بھی کوئی شکایت نہیں رہی


پوچھنے والے تو نے پوچھا لطف کرم احسان کیا 
لب پر آئے حرف تمنا عشق کے یہ آداب نہیں


اپنی وفا نہ ان کی جفاؤں کا ہوش تھا
کیا دن تھے جبکہ دل میں محبت کا جوش تھا


تم کو آتا ہے پیار پر غصہ
مجھ کو غصے پر پیار آتا ہے


باقی نہ دل میں کوئی بھی یارب ہوس رہے
چودہ برس کے سن میں وہ لاکھوں برس رہے


تجھ سے مانگوں میں تجھی کو کہ سبھی کچھ مل جائے
سو سوالوں سے یہی ایک سوال اچھا ہے


ساری دنیا کے ہیں وہ میرے سوا
میں نے دنیا چھوڑ دی جن کے لۓ


Awesome Shayari Images, Urdu love Shayari Images

Awesome Shayari Images love, Urdu Shayari love

Awesome Shayari Images, Urdu Shayari love

URDU love Shayari Images, awesome Shayari Images


میرے بس میں یا تو یارب وہ ستم شعار ہوتا
یہ نہ تھا تو کاش دل پر مجھے اختیار ہوتا


رتبہ شہیدِ عشق کا گر جان جائیے
قربان جانے والے کے قربان جائیے


جو دل تیرے غم کا نشانہ بھی ہے
قتیلِ جفاۓ زمانہ بھی ہے


کچھ تجھ کو خبر ہے ہم کیا کیا اے شورشِ دوراں بھول گئے
وہ زلفِ پریشاں بھول گئے وہ دیدۂ گریاں بھول گئے


اٹھیں گے ابھی اور بھی طوفاں مرے دل سے
دیکھوں گا ابھی عشق کے خواب اور زیادہ


ہم عرضِ وفا بھی کر نہ سکے کچھ کہہ نہ سکے کچھ سن نہ سکے
یاں ہم نے زباں ہی کھولی تھی واں آنکھ جھکی شرما بھی گۓ

یہ اپنی وفا کا عالم ہے اب ان کی جفا کو کیا کہۓ
اس نشترِ زہر آگے رکھ کر نزدیک رگِ جاں بھول گئے



Post a Comment

2 Comments